Jaun Elia

جون ایلیا

تھی جو وہ اک تمثیل ماضی آخری منظر اس کا یہ تھا

پہلے اک سایہ سا نکل کے گھر سے باہر آتا ہے

اس کے بعد کئی سائے سے اس کو رخصت کرتے ہیں

پھر دیواریں ڈھے جاتی ہیں دروازہ گر جاتا ہے


www.000webhost.com