Jaun Elia

جون ایلیا

برس گزرے تمہیں سوئے ہوئے

اٹھ جاؤ سنتی ہو اب اٹھ جاؤ

میں آیا ہوں

میں اندازے سے سمجھا ہوں

یہاں سوئی ہوئی ہو تم

یہاں روئے زمیں کے اس مقام آسمانی تر کی حد میں

باد ہائے تند نے

میرے لیے بس ایک اندازہ ہی چھوڑا ہے!



www.000webhost.com