Jaun Elia

جون ایلیا

وہ خیال محال کس کا تھا

آئنہ بے مثال کس کا تھا


سفری اپنے آپ سے تھا میں

ہجر کس کا وصال کس کا تھا


میں تو خود میں کہیں نہ تھا موجود

میرے لب پر سوال کس کا تھا


تھی مری ذات اک خیال آشوب

جانے میں ہم خیال کس کا تھا


جب کہ میں ہر نفس تھا بے احوال

وہ جو تھا میرا حال کس کا تھا


دوپہر باد تند کوچۂ یار

وہ غبار ملال کس کا تھا



www.000webhost.com