Jaun Elia

جون ایلیا

نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم

بچھڑنا ہے تو جھگڑا کیوں کریں ہم


خموشی سے ادا ہو رسم دوری

کوئی ہنگامہ برپا کیوں کریں ہم


یہ کافی ہے کہ ہم دشمن نہیں ہیں

وفا داری کا دعویٰ کیوں کریں ہم


وفا اخلاص قربانی محبت

اب ان لفظوں کا پیچھا کیوں کریں ہم


ہماری ہی تمنا کیوں کرو تم

تمہاری ہی تمنا کیوں کریں ہم


کیا تھا عہد جب لمحوں میں ہم نے

تو ساری عمر ایفا کیوں کریں ہم


نہیں دنیا کو جب پروا ہماری

تو پھر دنیا کی پروا کیوں کریں ہم


یہ بستی ہے مسلمانوں کی بستی

یہاں کار مسیحا کیوں کریں ہم



www.000webhost.com