Jaun Elia

جون ایلیا

غم ہے بے ماجرا کئی دن سے

جی نہیں لگ رہا کئی دن سے


بے شمیم و ملال و حیراں ہے

خیمہ گاہ صبا کئی دن سے


دل محلے کی اس گلی میں بھلا

کیوں نہیں گل مچا کئی دن سے


وہ جو خوشبو ہے اس کے قاصد کو

میں نہیں مل سکا کئی دن سے


اس سے بھی اور اپنے آپ سے بھی

ہم ہیں بے واسطہ کئی دن سے



www.000webhost.com