Jaun Elia

جون ایلیا

دل نے وفا کے نام پر کار وفا نہیں کیا

خود کو ہلاک کر لیا خود کو فدا نہیں کیا


خیرہ سران شوق کا کوئی نہیں ہے جنبہ دار

شہر میں اس گروہ نے کس کو خفا نہیں کیا


جو بھی ہو تم پہ معترض اس کو یہی جواب دو

آپ بہت شریف ہیں آپ نے کیا نہیں کیا


نسبت علم ہے بہت حاکم وقت کو عزیز

اس نے تو کار جہل بھی بے علما نہیں کیا


جس کو بھی شیخ و شاہ نے حکم خدا دیا قرار

ہم نے نہیں کیا وہ کام ہاں بہ خدا نہیں کیا



www.000webhost.com