Jaun Elia

جون ایلیا

دل کی تکلیف کم نہیں کرتے

اب کوئی شکوہ ہم نہیں کرتے


جان جاں تجھ کو اب تری خاطر

یاد ہم کوئی دم نہیں کرتے


دوسری ہار کی ہوس ہے سو ہم

سر تسلیم خم نہیں کرتے


وہ بھی پڑھتا نہیں ہے اب دل سے

ہم بھی نالے کو نم نہیں کرتے


جرم میں ہم کمی کریں بھی تو کیوں

تم سزا بھی تو کم نہیں کرتے



www.000webhost.com